Allah sa Lou Laga lo

گرمیوں میں میں اکثر چھت پر ہی سوتا ہوں۔ بعض دفعہ تہجد بھی چھت پر ہی پڑھ لیتا ہوں، اور فجر بھی۔ بڑا مزہ آتا ہے آسمان کی ہلکی ہلکی روشنی میں اللہ تعالیٰ کو یاد کرنے کا، چھوٹی چھوٹی سی دعائیں کرنے کا۔
مجھے ایک فیلنگ بڑی مزیدار لگتی ہے، جب مجھے لگتا ہے میں ویسے ہی نماز پڑھ رہا ہوں، مجھے ویسے ہی اچھی لگتی ہے نماز، مجھے ویسے ہی اچھا لگتا ہے اللہ تعالیٰ سے تھوڑا تھوڑا سا محبت کا اظہار کرنا، میرے ذہن میں کوئی دنیاوی مقصد نہیں ہوتا، کوئی اخروی مطلب نہیں ہوتا، بڑی مزیدار سی کیفیت ہوتی ہے، جیسے سب کچھ مل گیا ہو، جیسے جنت میں پہنچ گیا ہوں، اب کیا رہ گیا ہے مانگنے والا، اب تو تعریف ہی تعریف ہے اس پیارے رب کی۔ جس نے اپنے سارے وعدے پورے کر دیے، جس نے اپنی رحمتوں اور بخششوں کے انبار لگا دیے۔
دیکھتے ہی دیکھتے آدھی رات کی خاموشی، صبح کی رونقوں میں بدل جاتی ہے، اور اذانوں سے ماحول بقعہ نور بن جاتا ہے۔
بعض دفعہ میں ایسے ہی ماحول، اور ایسی ہی کیفیت میں نماز پڑھ کر سو جاتا ہوں۔
اور پھر اٹھتا ہوں تو سورج سر پر کھڑا ملتا ہے۔ چاروں طرف دھوپ پھیلی ہوئی ہوتی ہے، اور میں حیران ہوتا ہوں، میں دھوپ میں سویا ہوا تھا۔
وہ فجر کی نماز اور اوراد و وظائف کا ذائقہ ابھی منہ میں ہوتا ہے۔ وہ کپڑوں سے ابھی وضو کی خوشبو گئی نہیں ہوتی۔ بڑا مزہ آتا ہے ایک نئے دن کی، نئی خوشیوں میں جاگنے کا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اللہ تعالیٰ ہمیں نمازوں اور تلاوتوں کی محبت میں سونا جاگنا نصیب فرمائے، آمین۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

2 thoughts on “Allah sa Lou Laga lo

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Create your website with WordPress.com
Get started
%d bloggers like this:
search previous next tag category expand menu location phone mail time cart zoom edit close